مسجد کی بے حرمتی ،7 کشمیری نوجوانوں کی شہادت پر شوپیاں، پلوامہ ضلع میں مکمل ہڑتال

سری نگر: جنوبی کشمیر میں بھارتی فوج کے ہاتھوں مسجد کی بے حرمتی  اور7 کشمیری نوجوانوں کی شہادت پر ہفتے کو  شوپیاں اور پلوامہ ضلع میں مکمل ہڑتال رہی۔بھارتی فوجی آپریشن میں جنوبی کشمیر میں شہید ہونے والے گیارہویں جماعت میں زیر تعلیم17سالہ کاشف بشیر میر سمیت7 مقامی نوجوانوں کو فوج نے شمالی کشمیر کے نامعلوم مقام پر  سپرد خاک کر دیا ہے ۔

کے پی آئی  کے مطابق شوپیاں کے سترہ سالہ سالہ کاشف بشیر میر،یونس احمد کھانڈے، باسط احمد بخشی،مزمل منظور تانترے، عادل احمد لون اور ترال پلوامہ کے برہان احمد کوکہ اور،امتیاز احمد شاہ کی لاشیں لوا حقین کو نہیں دی گئی ہیں۔  یہ سات کشمیری نوجوان جمعہ اور ہفتے کو شوپیاں اور پلوامہ میں فوجی آپریشن میں شہید ہوگئے تھے ۔

جموں وکشمیرپولیس کے انسپکٹر جنرل کشمیرزون وجے کمار نے دعوی کیا ہے کہ  یہ نوجوان فوج سے جھڑپ  میں مارے گئے۔ میجر سمیت فوج کے 5اہلکار زخمی بھی ہوئے۔وجے کمار  کے مطابق  شوپیان میں مارے گئے پانچ میں سے 2کاتعلق حزب المجاہدین ،ایک کاتحریک لبیک اور2کاتعلق انصار الغزوہ الہند سے تھا۔

پلوامہ ترال  میں  مارے جانے والے،امتیاز احمد شاہ  انصار الاغزو الہند کا چیف کمانڈر  تھا۔ ادھر  بتایا گیا ہے کہ  17سالہ کاشف بشیر میر ولد بشیر احمد میر ساکن ڈاڈسرہ ترال حزب المجاہدین کے شہید کمانڈر برھان وانی  کا قریبی رشتہ دار تھا۔ 14اکتوبر 2010میں لرو جاگیر ترال میں اس کے  بڑے بھائی  نعیم احمد عرف شجاع کو فوج نے شہید کیا تھا جبکہ19جون 2014میں بوچھو ترال میں اس کا دوسرا بھائی ددوسرا بھائی عادل بشیر بھی شہید ہوا تھا۔

مزید پڑھیں: عالمی برادری مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں کا نوٹس لے:پاکستان

بھارتی فوجی آپریشن کے دوران فوج نے ضلع شوپیان کے جان محلہ میں مسجد کی بے حرمتی کی ۔ مسجد پر فائرنگ کی گئی  جس کے نتیجے میں مسجد کو نقصان پہنچا۔ سات نوجوانوں کی شہادت اور مسجد کے  بے حرمتی کے خلاف ہفتے کو جنوبی کشمیر کے شوپیاں اور پلوامہ ضلع میں مکمل ہڑتال رہی ۔ ان اضلاع میں انٹرنٹ سروس بند رہی ۔ گزشتہ روز پر تشدد مظاہروں کے دوران 4نوجوان پیلٹ لگنے سے زخمی ہوگئے تھے

Recommended For You

About the Author: admin