مظفر آباد
25جنوری2020 ء
بھارتی نیتاؤں کے ہاتھ نہ صرف مظلوم کشمیری مسلمانوں سے بلکہ بھارتی مسلمانوں کے خون سے بھی ر نگین ہیں،ان حالات میں بھارت کا یوم جمہوریہ منانا مظلوم انسانوں کے زخموں پر نمک پاشی کے مترادف ہے۔ان خیالات کا اظہار متحدہ جہاد کونسل کے چیئر مین اور حزب المجاہدین کے امیر سید صلاح الدین نے متحدہ جہاد کونسل کے اعلیٰ سطحی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے زوردیتے ہوئے کہابھارت نے بہتر سال سے کشمیر پر اپنا فوجی ناجائز قبضہ جمایا ہوا ہے،عالمی قوتوں کو چاہیے جس طرح انہوں نے ایسٹ تیمور،جنوبی سوڈان اور سکاٹ لینڈ کا مسئلہ بغیر کسی لمحے کے ضائع کئے حل کیا، مسئلہ کشمیر کا بھی حل اسی طرح تلاش کیاجائے۔بھارت نے سات دہائیوں کے دوران لاکھوں کشمیریوں کو شہید کیا،ہزاروں بستیوں کو تاخت تاراج کیا،اربوں مالیت کی پراپرٹی کو نقصان پہنچایا،ہزاروں کشمیریوں کو پابند سلاسل کیا،ہزاروں کی تعداد میں عفت مآب خواتین کو بے آبروکیااور آج بھی بھارت کشمیر میں انسانی حقوق کی دھجیاں اڑانے میں مصروف ہے لیکن اسے کوئی بھی طاقت نکیل ڈالنے کے لئے تیار نہیں ہے۔عالمی طاقتیں خاموش تماشائی کا کردار ادا کررہی ہیں حالانکہ سلامتی کونسل میں اٹھارہ قراردادیں موجود ہیں اور بھارت کی اُس وقت کی حکومت نے خود بھی تسلیم کیا ہے کہ وہ کشمیریوں کو ان کاجائز حق،حق خودارادیت دینے کے پابند ہیں۔جہاد کونسل کے سربراہ نے کہا کہ وقت کی ضرورت ہے کہ بھارتی حکومت نے جو اپنی فوج کو قتل عام کرنے کا کھلا لائسنس دے رکھا ہے اسے دباؤ ڈال دیا جائے کہ وہ عالمی قوانیں کی پاسداری کرے۔ انسانی حقوق کی تنظیموں کو بھی چاہیے کہ وہ کشمیر میں ہونے والی انسانی حقوق کی پامالی کا نوٹس لے کراپنی کوششوں کو تیز کریں تاکہ خطہ کشمیر ایک بڑی تباہی سے بچ سکے۔انہوں نے کہا کشمیری قوم اپنے اس جائز مطابے کے لئے اپنی جد وجہد جاری رکھے ہوئے ہیں،اور پر امید ہیں کہ ہماری جدوجہد ان شا ء اللہ کا میاب ہوگی۔
سید صداقت حسین
ترجمان متحدہ جہاد کونسل

Recommended For You

About the Author: admin