مظفرآباد  : عظیم کشمیری آزادی پسند رہنماؤں شہید محمد افضل گورو اور محمد مقبول بٹ شہید کو خراج عقیدت پیش کرنے کیلئے پاسبان حریت جموں کشمیر کے زیراہتمام ریلی کا انعقاد کیا گیا۔

عظیم کشمیری آزادی پسند رہنماؤں شہید محمد افضل گورو اور محمد مقبول بٹ شہید کو خراج عقیدت پیش کرنے کیلئے پاسبان حریت جموں کشمیر کے زیراہتمام ریلی کا انعقاد کیا گیا۔

شھدآء کو انکی عظیم قربانیوں پر خراج عقیدت پیش کیا گیا۔ بھارتی ظالم حکومت اور متعصب عدلیہ نے ہمیشہ

کشمیریوں کیخلاف بے رحم اور غلط فیصلے مسلط کیئے۔ مقررین کا ریلی سے خطاب 

تفصیلات کیمطابق بابائے حریت سید علی شاہ گیلانی کی اپیل پر مقبوضہ ریاست اور آزاد کشمیر میں محمد افضل گورو اور محمد مقبول بٹ کی مظلومانہ شہادتوں پر انہیں خراج عقیدت پیش کرنے کیلیئے ریلی کا انعقاد کیا گیا۔ کشمیر کے ان عظیم شہدآء کو خراج عقیدت پیش کرنے کیلئے شہید افضل گورو چوک دومیل سے ریلی کا انعقاد کیا گیا ۔ ریلی میں لوگوں کی بڑی تعداد شریک ہوئی۔ شرکاء شھدائے کشمیر اور آزادی کے حق میں فلک شگاف نعرے بلند کر رہے تھے ۔ کشمیری مظاہرین نے بینر اٹھا رکھے تھے جن پر شھدائے کشمیر کے حق میں تہنیتی جملے درج تھے جبکہ بھارت کی ظالم عدلیہ کیخلاف مزمتی جملے لکھے گئے تھے۔ شہید افضل گورو شہید مقبول بٹ اور دیگر شھدائے جموں کشمیر کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے عزیراحمدغزالی چیئرمین پاسبان حریت جموں کشمیر نے کہا کے ہندوستان کی حکومت، افواج، عدلیہ اور دیگر ادارے جموں کشمیر کے عوام سے ضد ،عناد اور دشمنی کی بنیاد پر برتاؤ کرتے آ رہے ہیں۔ انکا کہنا تھا کے 9 فروری 2013 کو محمد افضل گورو اور 11 فروری 1984 کو محمد مقبول بٹ کو ہندوستان کی متعصب عدلیہ نے عناد اور بغض کی بنیاد پر ظالمانہ فیصلوں کے زریعے ان کشمیری رہنماؤں کو دہلی کی تہاڑ جیل میں پھانسیوں کی بھینٹ چڑھایا تھا۔ بھارتی ججوں نے کشمیری نوجوان محمد افضل گورو کو سزائے موت لکھتے ہوئے یہ تسلیم کیا تھا کے شواہد اسطرح کے نہیں کے ملزم کو پھانسی دی جائے لیکن بھارتی جنتا کو مطمئن رکھنے کیلئے سزائے موت دینے کا فیصلہ کیا جاتا ہے۔ مزید کہنا تھا کے تاریخ گواہ ہے کے کشمیری عوام کے تئیں ہندوستان کی عدلیہ کے فیصلے ہمیشہ سے اصولوں، حقائق اور انسانی قدروں کیخلاف ہوئے ہیں۔ انکا کہنا تھا کے ان کشمیری شھدآءکے جسد خاکی بھی تہاڑ جیل میں ہی دفنا دیئے گئے تھے جبکہ انکے ورثاء کئی برس تک میتوں کی واپسی کا مطالبہ کرتے رہے تھے۔ انٹرنیشنل فورم فار جسٹس کے وائس چیئرمین مشتاق السلام، پیپلز پارٹی کے راہنما شوکت جاوید، عثمان علی ہاشم، محمد ایمل فرزام اور دیگر مقررین نے کہا کے جعلی جمہوریت کی آڑ میں متنازعہ ریاست کے اندر بھارتی فوجی محاصرے، قابض افواج کی دہشتگردی مسلسل جاری ہے ۔ آج بھی نوجوانوں کو جعلی فوجی مقابلوں میں شہید کرکے آبائی علاقوں سے دور دفنایا جارہاہے ۔ مقررین نے انسانی حقوق کی عالمی تنظیموں سے مطالبہ کیا کے وہ بھارت کو متنازعہ ریاست میں ہر طرح کی دہشتگردی سے روکے۔ ریلی کے شرکاء نے افضل گورو چوک سے سرینگر شاہراہ پر مارچ کیا اور شہید راہنماؤں کے حق میں فلک شگاف نعرے بلند کیئے ۔۔۔۔ 

Recommended For You

About the Author: admin