شمالی کشمیرمیں 8گھنٹے تک مسلح تصادم،کمانڈر سمیت 2 مجاہدین شہید

سرینگر:شمالی کشمیر میں ضلع بارہمولہ کے وانی گام پائین کریری علاقے میں آٹھ گھنٹے سے زائد قابض بھارتی فوج اور مجاہدین کے درمیان تصادم آرائی میں جیش کمانڈر سمیت 2 مجاہدین شہید جبکہ ایک فوجی اہلکار شدید زخمی ہوا۔ادھر وتر گام رفیع آباد اور براری پورہ عید گاہ میں گرینیڈ دھماکے ہوئے ،جن میں قابض فوج کا ایک اہلکار زخمی ہوا جبکہ گاندربل میں زخمی سی آر پی ایف اہلکار دم توڑ بیٹھا ۔

کے پی آئی کے مطابق پولیس نے بتایا کہ وانی گام پائین کریری گائوں میں 2یا تین عسکریت پسندوں کی موجود گی کے حوالے سے مصدقہ اطلاع موصول ہونے کے بعد 29آر آر اورسی آر پی ایف176 بٹالین کے اشتراک سے گائوں کو محاصرے میںلیا گیا اور اس دوران گائوں سے اندر یا باہر جانے کے سبھی راستے بند کردیئے گئے

پولیس نے بتایا کہ انہیں نیو بستی وانی گام پائین میں عسکریت پسندوں کی موجودگی کے بارے میں اطلاع ملی تھی۔مقامی لوگوں نے بتایا کہ بستی کو صبح 7بجے محاصرے میں لینے کے بعد گھر گھر تلاشی شروع کرنے سے قبل قابض فورسز نے ہوا میں کچھ فائر کئے لیکن جواب میں کوئی فائر نہیں کھولا گیا۔ اسکے کئی گھنٹے بعد دوبارہ ہوائی فائرنگ کی گئی لیکن اس بار بھی کوئی جواب نہیں آیا۔

لوگوں کا کہنا ہے کہ کئی بار بستی کی تلاشیاں لیں گئیں لیکن عسکریت پسندوں کی موجودگی کا اتہ پتہ نہیں چل سکا۔ لیکن سہ پہر کو معراج الدین نامی ایک شخص کے مکان میں دور سے کوئی حرکات و سکنات دیکھیں گئیں جس کے فورا بعد مکان کوے اردگرد گھیرا تنگ کیا گیا۔اسکے بعد فائرنگ کا تبادلہ شروع ہوا جس میں قابض بھارتی فوج کا ایک اہلکار زخمی ہوا جبکہ ایک مجاہد شہید ہوا۔ اسکے بعد دوسرے مجاہد کیخلاف آپریشن شروع کیا گیا اور قریب 8گھنٹے کے بعدشام سے قبل ایک اور مجاہد کو شہید کیا گیا۔رہائشی مکان کو شدید نقصان پہنچا ہے۔معلوم ہوا ہے کہ معراج الدین بنیادی طور پر بانڈی پورہ کے رہنے والے ہیں اور چند روز سے وہ مکان میں رہائش پذیر نہیں تھا بلکہ کہیں گیا ہوا تھا۔

پولیس کا کہنا ہے کہ شہید عسکریت پسندوں کی شناخت ابرار عرف لنگو ساکن پاکستان اورعامر سراج بٹ ولد سراج الدین ساکن وارہ پورہ سوپور کے بطور ہوئی ہے۔ عامر سراج سوپور کا معروف فٹبالر تھا جو 22جون سے لاپتہ ہوا تھا۔تاہم پولیس کی جانب سے عسکریت پسندوں کی شناخت ظاہر نہیں کی گئی ہے۔ وتر گام رفیع آباد میں مجاہدین نے شام 7بجے کے قریب SSBکیمپ پر گرینیڈ پھینکا جو کیمپ کے اندر زوردار دھماکے سے پھٹ گیا جس کے نتیجے میں ایک اہلکار زخمی ہوا۔واقعہ کے بعد علاقے کو محاصرے میں لیا گیا اور تلاشیاں لی گئیں۔

ادھر شام دیر گئے براری پورہ عیدگاہ کے نزدیک 161بٹالین سی آر پی ایف کیمپ پر گرینیڈ پھینکا گیا جو دیوار کے قریب زوردار دھماکے سے پھٹ گیا، تاہم کوئی نقصان نہیں ہوا۔دریں اثنا گزشتہ روز توحید چوک دودہرہامہ گاندربل میں ہوئے دستی بم حملے میں زخمی ہونے والا سی آر پی ایف اہلکار زخموں کی تاب نہ لا کر دم توڑ بیٹھا۔115بٹالین سی آر پی ایف کے عارضی بنکر پر دستی بم سے حملہ کرنے کے دوران 38 سالہ مترنجائے چاٹیہ ساکن آسام میڈیکل انسٹیچوٹ صورہ میں جمعرات 6 بجے زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے دم توڑ گیا۔اس دھماکے کے دوران چار اہلکار اور بلاک ڈیولپمنٹ آفیسر واکورہ زخمی ہوئے تھے ۔پولیس نے گزشتہ روز ہوئے دستی بم حملے کے سلسلے میں 7 افراد کو پوچھ گچھ کے لئے حراست میں لیا گیا ہے ۔

Recommended For You

About the Author: admin