بھارتی حکمران، حریت پسند کشمیری عوام کو خوفزدہ نہ کرسکے

8فروری 2021
تحریک آزادی کشمیر کے عظیم سپوتوں محمد مقبول بٹ ؒ  اور افضل گورو ؒ کو پھانسی کو پھندے پر لٹکاکر اور تہاڑ جیل میں ہی ان کی لاشوں کو دفنا کربھارتی  حکمران، حریت پسند کشمیری عوام کو خوفزدہ نہ کرسکے بلکہ اس کے برعکس کشمیری عوام میں اپنی آزادی حاصل کرنے کا جنون مذید بڑھتا گیا۔ان خیالات کا اظہار حزب سربراہ اور متحدہ جہاد کونسل کے چیر مین سید صلاح الدین نے  پریس کے نام جاری اپنے ایک بیان میں کیا ہے۔انہوں نے کہا کہ 11فروری1984ء کو محمد مقبول بٹ ؒ کو تختہ دار پر لٹکا کر بھارتی حکمرانوں اور ان کے ریاستی گماشتوں نے سمجھا کہ اس عمل سے جموں و کشمیر میں آزادی کا خواب دیکھنے والوں کے حوصلے پست ہو جائنگے اور وہ غلامی کی زندگی سہنے پر ہی آمادہ ہوجائنگے۔لیکن اس شہادت نے ہزاروں مقبولوں اور افضلوں کو جنم دیا۔پوری دنیا میں بھارتی حکمرانوں کا بھیانک چہرہ بے نقاب ہوا اور آزادی کی تحریک مظبوط سے مظبوط تر ہوتی چلی گئی۔حزب سربراہ نے شہید مقبول بٹ ؒ اور شہید محمد افضل گورو کو زبردست خراج عقیدت ادا کرتے ہوئے کہا کہ ان کی قربانیوں کی لاج رکھنا نہ صرف ہم پر فرض ہے بلکہ یہ ہم پر قرض بھی ہے۔سید صلاح الدین نے قائد حریت سید علی گیلانی کی 9اور11فروری کی ہڑتال کی کال کی حمایت کرتے ہوئے، کشمیری عوام سے اپیل کی ہے کہ ان دونوں دنوں میں شہید مقبول بٹ اور شہید افضل گورو سمیت ہزاروں شہداء کی یاد میں دعا عیہ تقریبات کا اہتمام کیا جائے۔شہداء ہمارے ماتھے کا جھومر ہیں اور ان کا مقدس خون ضرور رنگ لائیگا۔انشا اللہ
                                                                                                                      
                                                                                                          

Recommended For You

About the Author: admin